سورۂ فاتحہ کے اسماء اور ان کی وجہ تسمیہ NafseIslam | Spreading the true teaching of Quran & Sunnah

This Article Was Read By Users ( 1528 ) Times

Go To Previous Page Go To Main Articles Page



اس سورت کے متعددنام ہیں اور ناموں کا زیادہ ہونا ا س کی فضیلت اور شرف کی دلیل ہے،اس کے مشہور 15 نام یہ ہیں :
(1)…٭سورۂ فاتحہ٭ سے قرآن پاک کی تلاوت شروع کی جاتی ہے اوراسی سورت سے قرآن پاک لکھنے کی ابتداء کی جاتی ہے ا س لئے اسے ٭ فَاتِحَۃُ الْکِتَابْ٭ یعنی کتاب کی ابتداء کرنے والی کہتے ہیں۔

(2)… اس سورت کی ابتداء٭ اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ ٭ سے ہوئی ،اس مناسبت سے اسے ٭ سُوْرَۃُ الْحَمدْ٭ یعنی وہ سورت جس میں اللہ تعالیٰ کی حمد بیان کی گئی ہے،کہتے ہیں۔

(3،4)…٭ سورہ ٔفاتحہ٭ قرآن پاک کی اصل ہے ،اس بناء پر اسے ٭ اُمُّ الْقُرْآنْ٭ اور ٭اُمُّ الْکِتَابْ٭ کہتے ہیں۔

(5)…یہ سورت نماز کی ہر رکعت میں پڑھی جاتی ہے یا یہ سورت دو مرتبہ نازل ہوئی ہے اس وجہ سے اسے ٭اَلسَّبْعُ الْمَثَانِیْ٭ یعنی بار بار پڑھی جانے والی یا ایک سے زائد مرتبہ نازل ہونے والی سات آیتیں ، کہا جاتا ہے۔

(6تا8)…دین کے بنیادی امور کا جامع ہونے کی وجہ سے سورۂ فاتحہ کو٭ سُوْرَۃُ الْکَنزْ ، سُوْرَۃُ الْوَافِیَہْ٭ اور ٭سُوْرَۃُ الْکَافِیَہْ٭ کہتے ہیں۔

(9،10)… ٭ شفاء ٭ کا باعث ہونے کی وجہ سے اسے٭سُوْرَۃُ الشِّفَاءْ٭ اور ٭سُوْرَۃُ الشَّافِیَہْ٭کہتے ہیں۔

(11تا15)…٭ دعا٭ پر مشتمل ہونے کی وجہ سے اسے٭سُوْرَۃُ الدُّعَاءْ ، سُوْرَۃُ تَعْلِیْمِ الْمَسْئَلَہْ، سُوْرَۃُالسُّوَالْ، سُوْرَۃُ الْمُنَاجَاۃْ٭اور٭ سُوْرَۃُ التَّفْوِیْضْ ٭ بھی کہا جاتا ہے۔
(خازن، تفسیرسورۃ الفاتحۃ،۱/۱۲، مدارک،سورۃ فاتحۃ الکتاب،ص۱۰، روح المعانی،سورۃ فاتحۃ الکتاب،۱/۵۱، ملتقطاً)
-----------------------
از:
صِرَاطُ الْجِنَان فِیْ تَفْسِیْرِ الْقُرْآن