فقیہ ابواللیث نصر بن محمد سمرقندی رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ المتوفیٰ ۳۷۳ھ ؁ NafseIslam | Spreading the true teaching of Quran & Sunnah

This Article Was Read By Users ( 2428 ) Times

Go To Previous Page Go To Main Articles Page



ولادتِ باسعادت:

امام ابو الليث سمرقندی علیہ رحمۃ اللہ الغنی ازبکستان کے شہر سمرقند ميں پید اہوئے جسے عربی میں سمران کہا جاتا ہے يہ مشہور شہر\\\'\\\' ماوراء النھر\\\'\\\'کے نام سے معروف ہے اس کی مساجد اور مدارس آج بھی اس کی روشن تاريخ اورشہرت پر دلالت کرتے ہيں ۔
آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کا نام نصر بن محمد بن احمد بن ابراہیم رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ہے ۔ آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ مفسر،محدث،فقیہ،حافظ، مشہور عابد وزاہد، صوفی اور اَئمہ اَحناف ميں سے ہيں ،فقیہ اور امام الھدیٰ کے لقب سے ملقب ہيں، آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ اپنے اصل نام سے زیادہ اپنی کنيت ابوالليث سمرقندی سے مشہور ہیں۔
اساتذہ کرام :
آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے کئی اساتذہ سے علمی فيض حاصل کيا،چند کے نام درج ذیل ہيں:

(۱)۔۔۔۔۔۔آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے والد گرامی محمد بن ابراہيم التوزی رحمۃ اللہ تعالی علیہ
(۲)۔۔۔۔۔۔الفقيہ ابو جعفر الھندوانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ
(۳)۔۔۔۔۔۔المفسِّرمحمد بن الفضل البلخی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ
(۴)۔۔۔۔۔۔خليل بن احمد القاضی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ
تلامذہ :

آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ سے کئی تشنگان ِ علم نے علمی فيوض وبرکات حاصل کئے جن ميں سے چند کے نام يہ ہيں :

(۱)۔۔۔۔۔۔لقمان بن حکيم الفرغانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ(یہ آ پ کی کتابوں کے راوی ہيں )
(۲)۔۔۔۔۔۔ابو سھل احمد بن محمد رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ
(۳)۔۔۔۔۔۔محمد بن عبد الرحمن الزبيری رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ

ان کے علاوہ بھی آپ کے کئی شاگرد ہيں ۔

تصنیفات :

آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی چندتصنیفات کے نام درج ذیل ہيں:

(۱)۔۔۔۔۔۔ بستان العارفین
(۲)۔۔۔۔۔۔تفسیر القرآن(یہ چار جلدوں میں ہے)
(۳) ۔۔۔۔۔۔ تنبیہ الغافلین
(۴)۔۔۔۔۔۔حصر المسائل، فی الفروع
(۵)۔۔۔۔۔۔خزانۃ الفقہ
(۶)۔۔۔۔۔۔دقائق الاخبارفی ذکر الجنۃ والنار
(۷)۔۔۔۔۔۔شرح الجامع الصغير للشيبانی، فی الفروع
(۸)۔۔۔۔۔۔عيون المسائل
(۹)۔۔۔۔۔۔ الفتاوٰی
(۱۰)۔۔۔۔۔۔ مبسوط، فی الفروع
(۱۱)۔۔۔۔۔۔مختلف الروايۃ ، فی مسائل الخلاف
(۱۲)۔۔۔۔۔۔ مقدّمۃ فی الفقہ
(۱۳)۔۔۔۔۔۔نوادر الفقہ
(۱۴)۔۔۔۔۔۔ النوازل ، فی الفروع
(۱۵)۔۔۔۔۔۔مقدمۃ الصلوٰۃ المشہورۃ
(۱۶)۔۔۔۔۔۔ تأسيس النظائر الفقھیۃ
(۱۷)۔۔۔۔۔۔قرّۃ العيون ومفرح القلب المحزون
(۱۸)۔۔۔۔۔۔عمدۃ العقائد
(۱۹)۔۔۔۔۔۔ فضائل رمضان
(۲۰)۔۔۔۔۔۔ شرعۃ الاسلام
(۲۱)۔۔۔۔۔۔ تفسير جز\\\'\\\' عم يتساء لون\\\'\\\'
(۲۲)۔۔۔۔۔۔رسالۃ فی اصول الدین

وصال پُر مَلال:

آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی تاريخ وفات ميں اختلاف ہے ۔ صاحب جواہر المضيۃ اورصاحب تاج التراجم نے ۳۷۳؁ہجری ذکر کی ہے اورعلامہ داؤدی نےطبقات المفسِّرین ميں ذکر کيا کہ آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کا وصال ۳۸۳؁ہجری ميں ہوا۔امام ذھبی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے سیر اعلام النبلاء میں اس بات کو ترجیح دی ہے کہ آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کا وصال ۳۷۵؁ہجری میں ہوا ۔
اللہ عزوجل کی ان پر رحمت ہو اور ان کے صدقے ہماری مغفرت ہو ۔

اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِيْن صلی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہ وسلم

==============
ماخوذ از:
نیکیوں کی جزاؤں اور گناہوں کی سزاؤں سے متعلق آیات ،احادیث اور حکایات پر مشتمل تألیف

بنام

نیکیوں کی جزائیں اور گناہوں کی سزائیں

ترجمہ
قُرَّۃُالْعُیُوْنِ وَمُفَرِّحُ الْقَلْبِ الْمَحْزُوْن
مؤ لِّف
فقیہ ابواللیث نصر بن محمد سمرقندی رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ
المتوفیٰ ۳۷۳ھ ؁
پیش کش:
مجلس المدینۃ العلمیۃ (شعبہ تراجِم کتب)

ناشر
مکتبۃ المدینہ باب المدینہ کراچی